umpires fighting in cricket

پیٹرنز ٹرافی گریڈ ٹو میچ میں امپائرز آپس میں جھگڑ پڑے جب کہ محمد باسط نے قیصر خان کو بوتل اٹھاکر ماردی۔

پیٹرنز ٹرافی گریڈ ٹو میں ایل سی سی اے گراؤنڈ لاہور پر گروپ ’’ڈی‘‘ کے ایک میچ میں برائٹو اور غنی گلاس کی ٹیمیں مقابل تھیں،اس دوران ایک دوسرے کے فیصلوں پر ناراض امپائرزمیدان میں بھی اپنی دھن میں مگن نظر آئے۔

میچ کا نتیجہ نکلنے کا کوئی امکان نہیں تھا جس پر محمد باسط نے کہا کہ کھیل ختم کرنے کا اعلان کردیں، قیصر خان نے اصرار کیا کہ جتنا بھی وقت ہے اوورز کرواؤں گا، بعد ازاں کھیل کے اختتام پر دونوں میں تلخ جملوں اور الزامات کا تبادلہ ہوا۔

 
 باسط نے کہا کہ مجھے علم ہے کہ تم کس کی پشت پناہی کی وجہ سے ایسا کررہے ہو، معاملہ آگے بڑھا تو انھوں نے قیصر خان کو مبینہ طور پر بوتل بھی دے ماری،میچ ریفری علی نقوی  یہ منظر دیکھتے رہے۔

ایک کرکٹر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اس واقعے پر وہاں موجود کھلاڑی حیران و پریشان رہ گئے،ان کا کہنا تھا کہ فیصلوں پر اتفاق نہ بھی ہوتو کبھی امپائرز کو اس طرح جھگڑتے نہیں دیکھا، عجیب صورتحال سب کیلیے ہی تشویش کا سبب بنی۔

ذرائع کے مطابق قیصر خان نے باسط کی جانب سے پھینکی گئی بوتل  کی موبائل پر تصویر اتاری اور اس کو محفوظ بھی کرلیا،انھوں نے اس ناخوشگوار واقعے کی بورڈ کو رپورٹ کردی ہے۔

یاد رہے کہ میچ برائٹو اور غنی گلاس کیلیے یکساں اہمیت کا حامل تھا،ڈرا ہونے کے بعد دونوں کے 18،18پوائنٹس ہوگئے ہیں۔

https://www.express.pk/story/1146472/16/

(Visited 1 times, 1 visits today)

About The Author

Also Watch

LEAVE YOUR COMMENT