قطر میں 2022ء فٹ بال کپ کے لیے تعمیراتی کام بند

خلیجی ریاست قطر کے دوسرے پڑوسی عرب ملکوں کےساتھ گذشتہ برس سے جاری سفارتی اور اقتصادی بحران کےبعد یہ اطلاعات سامنے آئی ہیں کہ تعمیراتی کمپنیوں نے 2022ء کے فٹ بال ورلڈ کپ کے سلسلے میں جاری تعمیراتی کام بند کردیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کےمطابق مصنوعی سیاروں سے لی گئی تصاویر سے ظاہر ہوتا ہے کہ قطر میں کھیل کے میدانوں میں عالمی فٹ بال کپ کے حوالے سے جاری تعمیر ومرمت کا کام کئی ماہ سے معطل ہے۔

خیال رہے کہ قطر اور اس کےپڑوسی ملکوں سعودی عرب، امارات اور بحرین کے علاوہ مصر کے ساتھ گذشتہ برس تعلقات کشیدہ ہوگئے تھے۔ چاروں ممالک نے قطر پر دہشت گردی کی پشت پناہی کا الزام عاید کرتے ہوئے اس کا سفارتی اور معاشی بائیکاٹ کر رکھا ہے۔ عرب ممالک کےبائیکاٹ کے باعث قطرمیں جاری تعمیراتی اور ترقیاتی منصوبے جن میں فٹ بال ورلڈ کپ کے سلسلے میں ہونے والی تیاریاں بھی متاثر ہوئی ہیں۔

امریکی ’بزبس انسپائڈر‘ ویب سائیٹ کے مطابق نے مصنوعی سیاروں سے لی گئی تصاویر شائع کی ہیں جن میں دکھایا گیا ہے کہ قطر میں چار سال بعد ہونے والے فٹ بال ورلڈ کپ کی تیاریوں کے سلسلے میں تعمیراتی کام بند کردیا گیا ہے۔

قطر میں فٹ بال ورلڈ کپ کے انتظامات کے حوالے سے جاری منصوبوں پر کام روکے جانےسے کئی طرح کے سوالات پیدا ہو رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق 2017ء کے دوران قطر کی درآمدات میں 40 فی صد کمی آئی ہے۔ مالی بحران کے باعث فٹ بال ورلڈ کپ کے لیے قطر کی جانب سےمرکزی راس ابو عبود اسٹیڈیم کی مرمت کا کام ابھی تک شروع نہیں کیا جاسکا ہے حالانکہ فٹ بال کپ کے انتظامات کی نگران سپریم کمیٹی نے دعویٰ کیا تھا کہ وہ 2020ء تک اس اسٹیڈیم میں کام مکمل کرلے گی۔

بزنس انسپائڈر کے مطابق قطری حکام اب تک آٹھ میں سے صرف تین اسٹیڈیم تیار کرسکے ہیں۔ کام میں سست روی اس بات کا اشارہ ہےکہ قطر سنہ 2022ء کے فٹ بال ورلڈ کپ کی میزبانی کے لیے تیاری سے قاصر ہوچکا ہے۔

Source

(Visited 51 times, 1 visits today)

About The Author

You Might Be Interested In

LEAVE YOUR COMMENT